وہی ہوا جس کا خدشہ تھا نواز شریف کی اوپن ہارٹ سرجری۔۔۔۔۔ کیا سابق وزیر اعظم لندن روانہ ہونے والے ہیں ؟ ناقابل یقین بریکنگ نیوز آ گئی

اسلام آباد (پی پی این مانیٹرنگ ڈیسک ) نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے معروف صحافی و تجزیہ کار مبشر لقمان نے سوال کیا کہ نواز شریف کے شریف میڈیکل سٹی اسپتال میں ٹیسٹ کیے گئے۔

اگر ان کی طبیعت زیادہ خراب ہو گئی تو کیا لندن کے ہارلے اسٹریٹ کلینک سے نواز شریف کے معالج کو بلایا جائے گا جنہوں نے پہلے ان کا علاج کیا تھا ؟ جس پر عباس خان آفریدی نے کہا کہ بالکل بلایا جائے گا، نواز شریف کے علاج میں اگر ان کے لندن والے معالج کی ضرورت پڑی تو ہو سکتا ہے کہ ان کو پاکستان بلا لیا جائے کیونکہ ہمارے لیے سب سے پہلے ان کی صحت ضروری ہے۔

ہماری توجہ نواز شریف کی صحت پر ہے۔ انہوں نے کہا کہ ابھی جب نواز شریف کا باقاعدہعلاج معالجہ شروع ہو گا اُس کے بعد ہی صورتحال واضح ہو گی ہوسکتا ہے کہ لندن سے ان کے معالج کو بلا ہی لیا جائے۔اگر باہر سے مزید ڈاکٹرز کی ضرورت پڑی تو ہم ان کو بھی بلائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف کا سات مرتبہ اسٹنٹ ڈالا گیا اور دو مرتبہ اُن کی اوپن ہارٹ سرجری ہوئی، ابھی اُن کو گردوں اور بلڈ پریشر کا بھی مسئلہ ہے۔جس پر مبشر لقمان نے کہا کہ پاکستان میں کون 70 سال کا ایسا شخص ہے جسے یہ ساری بیماریاں نہیں ہیں۔ جس پر عباس خان نے کہاکہ میرے خیال سے 70 سال کے افراد کی دو دو مرتبہ اوپن ہارٹ سرجریز نہیں ہوئیں۔ مبشر لقمان نے عباس خان آفریدی سے کہا کہ نواز شریف کی دو مرتبہ اوپن ہارٹ سرجری ہرگز نہیں ہوئی، آپ انجیو پلاسٹی کو اُس سے مکس کر رہے ہیں جس پر عباس خان نے کہا کہ آپ اس کی تفصیلات چیک کر لیں میاں صاحب کی دو مرتبہ اوپن ہارٹ سرجری ہوئی ہے، میں اس کو مکس نہیں کر رہا۔

Check Also

میئر کراچی وسیم اختر کرپٹ ہیں: فیصل واوڈا اپنے مؤقف پر ڈٹ گئے

وفاقی وزیر برائے آبی وسائل فیصل واوڈا نے ایک بار پھر میئر کراچی کو آڑے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *