سانحہ بلدیہ ٹاؤن: جرمنی میں ٹیکسٹائل کمپنی کے خلاف زرتلافی کا مقدمہ

(پی پی این مانیٹرنگ ڈیسک) جرمنی کی عدالت میں سانحہ بلدیہ ٹاؤں سے متعلق جرمن ٹیکسٹائل کمپنی (کے آئی کے) کے خلاف مقدمے کی سماعت شروع ہو گئی۔

کراچی کے علاقے بلدیہ ٹاؤن میں سانحے کا شکار ہونے والی فیکٹری میں جرمن ٹیکسٹائل کمپنی ’کے آئی کے‘ کے ملبوسات تیار ہوتے تھے۔

2012 میں فیکٹری میں آگ لگ جانے سے تقریباً 250 سے زائد ورکرز جاں بحق ہو گئے تھے۔

‘اے ایف پی’ کے مطابق سانحہ بلدیہ ٹاؤن کی متاثرہ خاتون اور تین رشتہ داروں کی جانب سے عدالت میں مقدمہ دائر کیا گیا کہ جرمن ٹیکسٹائل کمپنی ان چاروں کو فی کس 30 ہزار یورو زرتلافی کی مد میں ادا کرے۔

درخواست گزاروں نے موقف اختیار کیا کہ ‘کے آئی کے’ کمپنی کراچی کی فیکٹری میں تیار ہونے والے ملبوسات کی بڑی خریدار تھی، لہٰذا کمپنی بھی فیکٹری کی حالات کی نصف ذمہ دار ہے۔

کے آئی کے کمپنی نے الزامات کو رد کیا اور کہا مذکورہ مقدمہ قانونی حدود سے باہر ہے۔

Check Also

افغان پولیس اہلکار نے فائرنگ کر کے اپنے ہی 7 ساتھیوں کو قتل کر ڈالا

قندھار: افغان پولیس اہلکار نے اپنے ہی ساتھیوں پر فائرنگ کر کے 7 اہلکاروں کو …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *