متحدہ عرب امارات: جاسوسی پرعمر قید پانے والے طالب علم کو صدارتی معافی

(پی پی این مانیٹرنگ ڈیسک) متحدہ عرب امارات نے قومی دن کے موقع پر جاسوسی کے الزام میں عمر قید کی سزا پانے والے برطانوی طالب علم میتھیو ہیجز سمیت 700 قیدیوں کی سزا معاف کرکے انہیں رہا کرنے کا اعلان کر دیا۔

‘اے ایف پی’ کی رپورٹ کے مطابق متحدہ عرب امارات کے صدر شیخ خلیفہ بن زید النہیان نے قومی دن کے موقع پر 700 قیدیوں کی سزا معاف کرنے کا اعلان کیا جس میں میتھیو ہیجز بھی شامل ہیں۔

سرکاری اعلامیے کے مطابق میتھیو ہیجز کو قانونی معاملات مکمل ہوتے ہی متحدہ عرب امارات چھوڑنے کی اجازت ہوگی۔

متحدہ عرب امارات کے حکام نے ایک نیوز کانفرنس میں میتھیو ہیجز کی فوٹیجز دکھائیں جس میں وہ برطانوی خفیہ ایجنسی ‘ایم آئی سِکس’ کے ایجنٹ ہونے کا اعتراف کر رہے ہیں۔

ہیجز کی رہائی کے حوالے سے حکومتی عہدیداروں کا کہنا تھا کہ برطانوی حکام کی جانب سے میتھیو ہیجز کے خاندان کے بھیجے گئے ایک خط کے جواب میں صدارتی معافی دی گئی ہے۔

متھیو ہیجز کو گزشتہ ہفتے ابوظہبی کی ایک عدالت نے جاسوسی کے جرم میں تاحیات قید کی سزا سنائی تھی۔

اماراتی عہدیداروں کا کہنا تھا کہ ہیجز ‘100فیصد خفیہ سروس کے ایجنٹ تھے اور انہیں جاسوسی کے جرم میں سزا سنائی گئی تھی۔

ان کا کہنا تھا کہ ہیجز نے متحدہ عرب امارات کے حکمراں خاندان، فوج اور یمن جنگ میں شراکت سے متعلق معلومات اکٹھا کرنے کا اعتراف کیا تھا۔

میتھیو ہیجز کو رواں سال 5 مئی کو دبئی ایئرپورٹ سے گرفتار کیا گیا تھا اور عہدیداروں کے مطابق انہیں ایک وکیل بھی دیا گیا تھا اور حراست کے دوران اہل خانہ سے بات کرنے کی بھی اجازت تھی۔

Check Also

افغان پولیس اہلکار نے فائرنگ کر کے اپنے ہی 7 ساتھیوں کو قتل کر ڈالا

قندھار: افغان پولیس اہلکار نے اپنے ہی ساتھیوں پر فائرنگ کر کے 7 اہلکاروں کو …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *