خیبرپختونخوا احتساب کمیشن کے اثاثے حکومتی تحویل میں لینے کا فیصلہ

پشاور: خیبرپختونخوا احتساب کمیشن کو ختم کرنے کے حکومتی فیصلے پر عملدرآمد جاری ہے اور اب محکمے کے اثاثے حکومتی تحویل میں لینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

سرکاری ذرائع کے مطابق احتساب کمیشن کے اثاثے محکمہ ایڈمنسٹریشن اور اسٹیبلشمنٹ کے حوالے کیے جائیں گے جب کہ زیر سماعت مقدمات نیب اور اینٹی کرپشن کے سپرد کردیے جایئں گے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ احتساب کمیشن کے ریگولر ملازمین کو گولڈن ہینڈ شیک یا سرپلس پول میں ڈالا جائے گا اور کنٹریکٹ پر بھرتی ہونے والے 41 ملازمین کے مستقبل کا فیصلہ صوبائی کابینہ کرے گی۔

سرکاری ذرائع کے مطابق احتساب کمیشن کے خاتمے کے لیے ‘رپیل ایکٹ’ کی تیاری جاری ہے جس کی اسمبلی سے منظوری کے بعد احتساب کمیشن ختم ہوجائے گا۔

سیکریٹری اسٹیبلشمنٹ خیبرپختونخوا ارشد مجید نے جیو نیوز سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ احتساب کمیشن کے خاتمے کے حکومتی فیصلے پر عمل درآمد جاری ہے، قانون کے تحت بننے والے ادارے کو قانون سے ہی ختم کیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ جلد رپیل ایکٹ منظوری کے لیے حکومت کو بھیج دیا جائے گا۔

یاد رہے کہ احتساب کمیشن 2014 میں احتساب کمیشن ایکٹ کے تحت قائم کیا گیا تھا۔

Check Also

اسرائیل سے تعلقات کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا: فواد چوہدری

لاہور: وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے پاکستان کے اسرائیل سے تعلقات قائم …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *